89

بیوٹی فکیشن منصوبے کے تحت ساڑھے پانچ کروڑ کی منگوائی جانیوالی سٹریٹ لائٹس میں سے آدھی خراب ہوگئیں۔

Hits: 0

ایبٹ آباد:بیوٹی فکیشن منصوبے کے تحت ساڑھے پانچ کروڑ کی منگوائی جانیوالی سٹریٹ لائٹس میں سے آدھی خراب ہوگئیں۔ کروڑوں روپے ہڑپ کرلئے گئے۔ اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ بیوٹی فکیشن منصوبے کے تحت صوبائی حکومت کی جانب سے ہزارہ ڈویژن کے ڈویژنل ہیڈ کوارٹر ایبٹ آباد کیلئے ایک ارب سے زائد کے فنڈز فراہم کئے گئے۔ ایبٹ آباد میں یہ منصوبہ اپنے شروع دن سے ہی عوامی نقطہ چینی کا موضوع رہا۔ کیونکہ اس منصوبے کے تحت ایبٹ آباد شہر کی پہلے سے بنی ہوئی سڑکوں پر دوبارہ تارکول ڈال کر ساٹھ کروڑ سے زائد کی رقم خرچ گئی۔ جس پر شہریوں نے سرکاری فنڈز کے ضیاع پر شدید احتجاج بھی کیا۔ ٹھیکیدار راشدنے ملی بھگت سے غیرمعیاری سٹریٹ لائٹس ایبٹ آباد میں نصب کروائیں۔

ذرائع کے مطابق بیوٹی فکیشن منصوبے کے تحت 705 سٹریٹ لائٹس چائنہ سے درآمد کروائی گئیں۔ اور فی لائٹ 78000 روپے کی خریدی گئی۔ سٹریٹ لائٹس کی خریداری کیلئے نو کروڑ چھیالیس لاکھ روپے کے فنڈز خرچ کئے گئے۔ چند ماہ قبل ایبٹ آباد میں لائی جانیوالی یہ غیرمعیاری سٹریٹ لائٹسآدھی سے زیادہ خراب ہوچکی ہیں۔ منڈیاں میں میزائل چوک تاپی ایم اے بائی پاس پر پچیس سٹریٹ لائٹس نصب کی گئیں۔ جن میں سے سترہ خراب ہوچکی ہیں۔ جبکہ صرف آٹھ سٹریٹ لائٹس کام کررہی ہیں۔ اسی طرح ایبٹ آباد شہر میں بھی لگائی جانیوالی آدھی سے زیادہ سٹریٹ لائٹس خراب ہو چکی ہیں۔ ٹھیکیدار راشداپنی رقم کھری کرکے بری الذمہ ہوچکا ہے۔ ایبٹ آباد کے شہریوں نے قومی احتساب بیورو خیبرپختونخواہ اور وزیراعظم عمران خان سے مطالبہ کیاہے کہ ایبٹ آباد بیوٹی فکیشن فنڈز میں خردبرد اور غیرمعیاری کام کی تحقیقات کرکے ذمہ داروں کیخلاف سخت کارروائی کی جائے۔

#wpdevar_comment_1 span,#wpdevar_comment_1 iframe{width:100% !important;}.fb_iframe_widget span{width:460px !important;} .fb_iframe_widget iframe {margin: 0 !important;} .fb_edge_comment_widget { display: none !important; }

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں